لائیو اپ ڈیٹس

اتفاق رائے سے حکومت بنائیں گے، فیصلہ سی ای سی کرے گی، بلاول بھٹو 

Bilawal Bhutto, Central Executive Committee. Pakistan Peoples Party, Coalition government, city42
Stay tuned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

سٹی42: پاکستان پیپزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو  نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی تنہا حکومت بنانے کی پوزیشن میں نہیں، مستقبل کے لائحہ عمل کا فیصلہ سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی میں کریں گے۔ وفاق، بلوچستان اور پنجاب میں پیپلزپارٹی کے بغیر حکومت نہیں بن سکتی، چاروں صوبوں کی زنجیر پیپلزپارٹی ہے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری نے یہ باتیں ایک نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہیں۔ انہوں نے  الیکشن میں پاکستان پیپلز پارٹی کی کامیابی پر اپنےووٹرز اور سپورٹرز کو مبارک باد دی اور  کہا کہ پاکستان کے عوام کا شکر گزار ہوں، بڑی تعداد میں عوام ووٹ ڈالنے کیلئے نکلے ، پیپلزپارٹی کے سپورٹرز اور ووٹرز کو مبارکباد دیتا ہوں۔میں چاہوں گا کہ پیپلزپارٹی مل کر اتفاق رائے سے ایسی حکومت بنائے جس سےسیاسی استحکام ہو۔

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زداری نے کہا کہ پیپلزپارٹی واحد جماعت ہے جس کی نمائندگی چاروں صوبوں میں ہے، ابھی تک مکمل نتائج نہیں آئے،بلاول بھٹو نے کہا کہ سی ای سی بلا کر مل کر اتفاق رائے سے فیصلہ کریں گے، ملک کے مفاد میں ہے کہ سیاسی طور پر اتفاق پیدا کرنے کی کوشش کریں، جو ہونا تھا وہ ہو چکا ، سیاسی عدم استحکام کو ایڈریس کیے بغیر بننے والی حکومت کو عوام کے مسائل حل کرنے میں مشکلات ہوں گی۔

 میں نے عوام کو کہا ہے کہ میں نفرت و تقسیم کی سیاست کو ختم کرنا چاہتا ہوں، میں پرانی سیاست نہیں کرسکتا، ملک میں سیاسی استحکام لانا چاہتے ہیں، پہلے مکمل نتائج سامنے آجائیں۔   اکیلے تو حکومت نہیں بنا سکوں گا، میں اس پوزیشن میں نہیں کہ کسی فیصلےکااعلان کرسکوں، آزاد امیدوا رکیا فیصلے کرتے ہیں، اس پر بھی عوام کی نظر ہے۔

بلاول نے کہا کہ لاہور میں 8 اور 9 فروری کی درمیانی رات ہم بڑے مارجن سے جیت رہے تھے، صبح اٹھا تو دیکھا کہ ہم ہار چکے تھے، میں الیکشن سے مایوس نہیں ہوں،کم تیاری کے ساتھ پنجاب میں الیکشن مہم چلائی۔

بلاول بھٹو  نے کہا کہ بلوچستان میں حکومت بنانے کیلئے بھی ہم سب کو مل کر کوشش کرنا پڑےگی ، کوشش ہوگی کہ کوئٹہ میں این آئی سی وی ڈی کا یونٹ کھلوادوں۔