لاہورہائیکورٹ کا سول ججز کی بھرتی کا عمل بروقت مکمل کرنے کا فیصلہ

لاہورہائیکورٹ کا سول ججز کی بھرتی کا عمل بروقت مکمل کرنے کا فیصلہ

ملک اشرف: لاہورہائیکورٹ کا سول ججز  کی بھرتی کا عمل بروقت مکمل کرنے کا فیصلہ، سول ججز  کی بھرتی کے لیے امتحانی پیپرز  کی چیکنگ پرججز کی ڈیوٹیاں لگ گئیں، ماتحت عدالتوں کے 51 ججز کو24 فروری کو ہائیکورٹ رپورٹ کرنے کی ہدایت کی گئی۔

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کی منظوری کے بعد متعلقہ ججز کو مراسلہ جاری کیا گیا، 47 ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججزاور تین ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججز کو امتحانی پیپرز کی چیکنگ کے لیے چوبیس فروری کو صبح نو بجے رجسٹرار ہائیکورٹ کو رپورٹ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ان میں سنیارٹی پر پہلے نمبر پر آنے والے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سہیل ناصر، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سرگودھا مشتاق احمد تارڑ، سیشن جج فیصل آباد عظمی اخترچغتائی، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ساہیوال شکیل احمد، جج صارف عدالت راولپنڈی عبدالحفیظ، جج سپیشل کورٹ سنٹرل لاہورشیخ خالد بشیراورجج احتساب عدالت لاہورجواد الحسن شامل ہیں۔

جج بینکنگ کورٹ لاہور ظفر اقبال نعیم، سیشن جج ننکانہ آصف مجید اعوان، سیشن جج جھنگ تنویراکبر، سیشن جج بہاولپورملک مشتاق احمد اوجلہ، سیشن جج اٹک سجاد احمد، جج احتساب عدالت راولپنڈی انواراحمد خان، جج بینکنگ کورٹ فیصل آباد محمد وسیم اختر، سیشن جج چکوال محمد یار ولانہ، ممبرجوڈیشل پنجاب ریونیواتھارٹی ہارون لطیف، ممبرپنجاب سروس ٹربیونل محمد قاسم خان، جج انسداد دہشتگردی کورٹ بہاولپور محمد نعیم ارشد، جج کسٹم ٹیکنیشن اینڈ اینٹی اسمگلنگ لاہوربشری زمان، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج گجرات مظفرعلی شاہ، جج انسداد دہشت گردی کورٹ لاہورعبدالقیوم خان، سیشن جج محمد شیراز کیانی، محمد خلیل ناز، جج صارف عدالت ملتان ارم ایاز، جج اینٹی کرپشن کورٹ سرگودھا عزیزاللہ کلو، جج انسداد دہشتگردی کورٹ راولپنڈی سلیمان بیگ اورسیشن جج میانوالی جاوید الحسن چشتی سمیت دیگر ججزشامل ہیں۔