سماجی فاصلہ نظر انداز، بازاروں میں خریداروں کا رش

سماجی فاصلہ نظر انداز، بازاروں میں خریداروں کا رش

( عفیفہ نصر اللہ) لاہور کےبازاروں میں خریداروں کا رش، شہریوں کی بڑی تعداد سماجی فاصلے کو نظرانداز کرنے لگ گئی۔

 لاہور کی کریم مارکیٹ جہاں ایکسپورٹ کوالٹی کے کپڑے انتہائی کم داموں میں فروخت کیے  جاتے ہیں۔ لاک ڈاؤن میں نرمی کرتے ہوئے جیسے ہی دکانوں میں خریداری کی اجازت دی گئی تو دکان داروں سمیت خریداروں نے بھی حکومتی احکامات کو ہوا میں اڑا دیا۔مارکیٹ میں آنے والے زیادہ تر لوگ بغیر ماسک اور سینیٹائزر خریداری میں مصروف رہے، سماجی فاصلے کوبھی فراموش کردیا گیا۔

 شہریوں کا کہنا تھا کہ حکومتی ایس او پیز میں کی جانے والی یہ بے احتیاطی صرف اور صرف انتظامیہ کی لاپرواہی کے باعث ہے۔ بازار میں آ نے والے خریداروں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ کو چاہیے کہ تمام بازاروں میں سماجی فاصلےکو ممکن بنائے۔

دوسری جانب  سی سی پی او لاہور ذوالفقارحمید نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت کی جاری کردہ ایس او پیز کے مطابق کل سے شہر بھر میں مکمل لاک ڈاؤن ہوگا۔ مارکیٹس، بازار، دکانیں بند جبکہ ہر قسم کی نقل و حرکت پر بھی مکمل پابندی ہوگی۔ تمام پرائیویٹ دفاتر بھی بند رہیں گیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ڈبل سواری سمیت ہر قسم کی ٹرانسپورٹ پر مکمل پابندی ہوگی۔ اس ضمن میں شہر بھر میں لاک ڈاؤن کو یقینی بنانے کےلئے جگہ جگہ ناکہ بندی کی جائے گی۔ ذوالفقارحمید نے کہا کہ غیر ضروری گھروں سے نکلنے والوں کےخلاف کارروائی ہوگی۔

انہوں نے شہریوں سے اپیل کی کہ پریشانی سے بچنے کیلئے گھروں میں محفوظ رہیں۔ سربراہ لاہور پولیس نے پولیس افسران کو ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ نماز جمعہ کے دوران حکومتی ایس او پیز پر عملدرآمد کروایا جائے۔ مساجد اور عبادت گاہوں کے اندر اور باہر سوشل ڈیسٹنس پالیسی کو یقینی بنایا جائے۔ جمعہ کے نماز کے وقت مساجد اور عبادت گاہوں کے ارد گرد ڈولفن اور پیرو فورس کی گشت میں اضافہ کیا جائے۔