ہمارا کام ہم پر چھوڑ دیں: سابق صدر آصف علی زرداری


سعدیہ خان: پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمینٹیرینز کے چیئرمین آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ ٹریڈنگ اکاؤنٹس کو جعلی اکاؤنٹس کہا گیا، سمجھ آگیا کہ یہ اصل میں 18 ویں ترمیم کا جھگڑا ہے۔

یہ بھی لازمی پڑھیں:نیوز بلیٹن 3بجے 14 نومبر2018  

سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ یہ ہمیشہ میرے دوستوں کو پکڑتے ہیں، یہ ہرطرف سے مجھ پر حملہ کیوں کررہے ہیں، سمجھ آگیا ہے کہ یہ اصل میں 18 ویں ترمیم کا جھگڑا ہے، جن دوستوں نے سندھ میں انڈسٹریلائزیشن میں مدد کی انھیں اٹھایا گیا۔ سابق صدر نے مزید کہا کہ ہم نے پشتونوں کوشناخت دی، یہ لوگ ہوش کے ناخن لیں،خود تو بنی گالہ سے نیچے آتے نہیں، دیکھتے ہیں مولانا فضل الرحمان 31 اکتوبر کو آل پارٹیز کانفرنس کراتے ہیں یا نہیں۔

سابق صدر نےمزید کہا کہ ہمارا کام ہم پر چھوڑ دیں، ہم لڑ جھگڑ کر خود کرلیں گے۔ قومی مفاہمتی آرڈر ( این آر او ) کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں آصف زرداری نے کہا کہ میں نے تو مشرف سے بھی این آر او نہیں مانگا، میں نے ویسے ہی کیس جیتے، میں حکومت سے این آر او کیوں مانگوں؟ پرویز مشرف کے دور میں بھی جیل کاٹی ہے۔