امریکہ نے 33 لاکھ ڈالر کی نوادرات پاکستان کو واپس کر دیں

امریکہ نے 33 لاکھ ڈالر کی نوادرات پاکستان کو واپس کر دیں
کیپشن: The United States returned 33 3.3 million worth of antiquities to Pakistan
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

ویب ڈیسک:   امریکہ نے پاکستان سے لوٹی اور اسمگل کی گئی 33 لاکھ ڈالر   کی نوادرات پاکستان کو  واپس کر دیں۔

تفصیلات کے مطابق  104 قیمتی نوادرات مین ہٹن ڈسٹرکٹ کی اٹارنی سائی وینس جونیئر نے ایک تقریب میں پاکستان کو واپس کیں۔ اس تقریب میں اسلامی جمہوریہ پاکستان کی قونصل جنرل عائشہ علی اور امریکی ہوم لینڈ سکیورٹی انویسٹی گیشنز (ایچ ایس آئی) کے قائم مقام ڈپٹی سپیشل ایجنٹ انچارج اسٹیفن لی نے بھی شرکت کی۔

پاکستان کی قونصل جنرل عائشہ علی نے ان چوری شدہ ثقافتی خزانوں کی بازیابی کی کوششوں پر مین ہٹن ڈسٹرکٹ اٹارنی آفس اور ڈیپارٹمنٹ آف ہوم لینڈ سکیورٹی کا شکریہ ادا کیا۔عائشہ علی نے  اس  امید کا بھی اظہار کیا کہ جلد ہی یہ نمونے پاکستانی عجائب گھروں میں آویزاں کیے جائیں گے۔

یاد رہے کہ ان نوادرات کی اسمگلنگ میں بھارتی اسمگلر سبھاش کپور اور اس کے ساتھی ملوث ہیں جن کے خلاف ایچ ایس آئی نے طویل تحقیقات کیں اور   پاکستان سمیت کئی ممالک سے لوٹ کر امریکا اسمگل کی گئی نوادرات برآمد کیں۔سبھاش کپور  اس وقت بھارتی ریاست تامل ناڈو میں قید ہے۔2011 سے 2020  تک ، مین ہٹن ڈی اے آفس اور ایچ ایس آئی نے کپور اور اس کے نیٹ ورک کے ذریعے اسمگل شدہ 2500 سے زائد اشیاء برآمد کیں جن کی کل مالیت 143 ملین ڈالر سے بھی  زیادہ ہے ۔

مین ہٹن ڈسٹرکٹ آفس نے گزشتہ سال نومبر میں بھی پاکستان کو 45 نوادرات واپس کیے جو 2015 میں معروف اسمگلر نایف ہمسی سے برآمد ہوئے تھے۔