ملا برادر کابل پہنچ گئے، عام معافی پر قائم ہیں: طالبان

ملا برادر کابل پہنچ گئے، عام معافی پر قائم ہیں: طالبان
کیپشن: ملا عبدالغنی برادر
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

ویب ڈیسک: طالبان کے شریک بانی ملا عبدالغنی برادر گروپ کے ساتھی ارکان اور دیگر سیاست دانوں سے نئی افغان حکومت کے قیام پر بات چیت کے لیے کابل پہنچ گئے۔

 سینئر طالبان رہنما کا کہنا ہے کہ ایک جامع حکومت کے قیام کے لیے جہادی رہنماؤں اور سیاست دانوں سے ملاقات کے لیے  ملا برادرکابل میں ہیں۔ دریں اثناء طالبان رہنما خلیل الرحمن حقانی کی حزب اسلامی کے سربراہ اور سابق افغان وزیراعظم گلبدین حکمتیار سے کابل میں ملاقات ہوئی، دونوں رہنماؤں نے تازہ ترین صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔

یادرہے2010 میں پاکستان میں گرفتار کیے گئے ملا برادر کو 2018 میں امریکا کے مطالبے پررہا کیا گیا تھا  وہ قطر میں قائم طالبان کے سیاسی دفتر کے سربراہ  تھے اور امریکا سے مذاکرات میں اہم ترین کردارادا کیا۔ملا برادر منگل کو قطر سے افغانستان پہنچے تھے۔ ان کی واپسی کے چند گھنٹوں بعد طالبان نے اعلان کیا کہ اس بار ان کی طرز حکمرانی ماضی سے مختلف ہوگا۔ 

دوسری طرف طالبان نے افغان شہریوں کے خلاف انتقامی اور ظالمانہ کارروائیوں سے متعلق کہا ہے کہ ان میں ملوث طالبان جنگجوؤں کے خلاف تحقیقات  ہوں گی۔طالبان کے ایک عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ طالبان اپنی کارروائیوں کے لیے جواب دہ ہوں گے۔طالبان عہدیدار کے مطابق انہوں نے اگلے چند ہفتوں تک افغانستان کے لیے ایک نئے حکومتی ماڈل کا منصوبہ بنایا ہے۔