فردوس عاشق اعوان کےمستعفیٰ ہونےکےاعلان پروزیراعظم کا ردعمل

سٹی 42: وزیر اعظم عمران خان نے وزیراعلی پنجاب کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان کو اپنے عہدے سے استعفیٰ دینے سے روک دیا۔ 

تفصیلات کے مطابق  وزیراعظم کی ڈاکٹرفردوس عاشق اعوان کو بطور معاون خصوصی اطلاعات پنجاب کام جاری رکھنے کی ہدایت ,معاون  خصوصی فردوس عاشق اعوان   نےسیالکوٹ ضمنی انتخابات میں کھل کراپنا کردار ادا کرنے کے لئے اعلیI قیادت کو استعفی پیش کیا تھا-معاون خصوصی برائے اطلاعات وزیر اعلیٰ پنجاب ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ سیالکوٹ کے ضمنی الیکشن میں بھرپور حصہ لینے اور مؤثر کردار ادا کرنے کیلئے اپنے عہدے سے مستعفیٰ ہونے کا فیصلہ کیا لیکن وزیراعظم عمران خان نے مجھے عہدے سے مستعفی ہونے سے روک دیا ہے اوربطور معاون خصوصی کام جاری رکھنے کی ہدایت کی ہے۔ سیالکوٹ کے ضمنی الیکشن میں کھل کرفرنٹ فٹ پرآکر کھلنے کے لئے استعفیٰ پیش کیا -اب فیصلہ لیڈرشپ نے کرنا ہے -

ان خیالات کا اظہار معاون خصوصی وزیر اعلیٰ پنجاب ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے ڈی جی پی آر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ معاون خصوصی نے کہا کہ آزادکشمیر اور سیالکوٹ کے الیکشن میں اپوزیشن کی کارستانیاں سامنے آ رہی ہیں۔ ایک بار پھر مریم نواز نے ملکی سلامتی پر حملہ کیا ہے۔ کئی بار اقتدار میں رہنے کے باوجود ن لیگ مسئلہ کشمیر پر واضح روڈمیپ اور لائحہ عمل پیش نہ کرسکی۔ وزیراعظم عمران خان کے ایک جلسے نے ن لیگ کی خوشیوں کا ملیا میٹ کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف کشمیریوں کا مقدمہ لڑنے والا وکیل ہے اور دوسری طرف شاہی خاندان ہے۔ کشمیری دونوں جماعتوں کو آزما چکے ہیں اور اب وہ باربار انہیں آزمائیں گے۔ ن لیگ الیکشن سے پہلے ووٹ چوری کرنے کی داستان دہرا رہی ہے۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان  نے کہا کہ دوائی لینے گیا مریض ابھی تک واپس نہیں لوٹا اور محلوں میں بیٹھ کر اپنی اولاد کی جائیدادوں کی نگہبانی کررہا ہے -سیالکوٹ کے ضمنی الیکشن میں میرے حلقے میں ایک سیٹ ہے جس پر ایک خاندان کئی دہائیوں سے عوام کو بے وقوف بنانے میں مصروف عمل ہے اسی طرح ایل اے36آزادکشمیر کی سیٹ پر الیکشن ہونے جارہا ہے یہ دونوں الیکشن میرے حلقے میں ہورہے ہیں اور مجھے الیکشن کمیشن کی طرف سے نوٹسز بھجوائے جارہے ہیں جن کے جواب میں میں خود بھی اور اپنے وکیل کے ذریعے بھی حاضر ہوتی رہتی ہوں -انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلی عثمان بزدار کودرخواست دی کہ مجھے الیکشن مہم بھرپور چلانے کی اجازت دی جائے-اب میرے استعفی کی منظوری کا انحصاراعلی قیادت پر ہے-

 ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان  نےمزید کہا کہ میری خواہش ہے کہ اس الیکشن میں پی ٹی آئی ن لیگ کے بت پاش پاش کرکے کامیابی حاصل کرے ،الیکشن کی مہم بڑے جلسوں میں بدلنے جارہی ہے اور پی ٹی آئی کی فتح پر اختتام پذیر ہوگی،میں نہیں چاہتی کہ الیکشن کمیشن سے روز میرا پیچا پڑے اور یہ تاثر جائے کہ حکومت قوانین کو پاؤں تلے روند رہی ہے، فیصلےکااستحقاق لیڈرشپ کاہے،خواہش میری ہے،دیکھیں کیا عملدرآمدہوتا ہے۔