حوا کی بیٹی شوہر کے ہاتھوں قتل

حوا کی بیٹی شوہر کے ہاتھوں قتل

( فہد علی ) حوا کی ایک اور بیٹی تشدد کا نشانہ بن کرمنوں مٹی تلے جا سوگئی، پانچ ماہ کے بچے کی ماں 19 سالہ مہوش اپنے ہی شوہر کی سفاکی کا نشانہ بن گئی۔

زمانہ کوئی بھی ہو مگر خواتین پر ڈھائے جانے والے مظالم کم نہ ہو سکے، آج بھی خواتین کو آئے روز تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے اور اس کی ایسی ہی ایک مثال انیس سالہ مہوش ہے جو ڈیڑھ سال تک اپنے خاوند کے تشدد کا نشانہ بننے کے بعد اس کے ہاتھوں قتل کر دی گئی۔

اعوان ٹاؤن کی رہائشی مہوش کے والدین کا کہنا ہے کہ اسکا شوہر فیصل اکثر اسے تشدد کا نشانہ بنا چکا ہے جو منع کرنے پر بھی باز نہ آتا اور نشے میں دھت ہو کر اپنی بیگم کو گرم چمٹوں سے مارتا۔ بوڑھے ماں باپ اپنی بیٹی کی میت پر رونے کے ساتھ ساتھ انصاف کی اپیل کرتے رہے۔

پولیس نے جائے وقوع سے شواہد اکٹھے کرنے کے بعد لاش کو پوسٹمارٹم کے لیے مردہ خانے منتقل کر دیا۔ پولیس کا کہنا تھا کہ ملزم فیصل کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔