پہلوانی میں رستم ہند ، اداکاری میں کنگ کانگ

پہلوانی میں رستم ہند ، اداکاری میں کنگ کانگ

 سٹی 42: دارا سنگھ کا شمار ہندوستانی پہلوان, سیاستدان اور ایک اداکار کے طور پر کیا جاتا ہے۔ انہوں نے بے شمار پنجابی اور ہندی فلموں میں ادکاری کے جوہر دکھائے اور متعدد بین الاقوامی پہلوانوں کو مات دی ۔

تفصیلات کے مطابق اداکار دارا سنگھ نہایت سادہ مزاج اور شگفتہ طبیعت کے مالک تھے، انکی پیدائش 19 نومبر، 1928 میں پنجاب کے ایک جاٹ سکھ  خاندان میں ہوئی تھی۔اپنے لمبے قد و قامت کی وجہ سے اُن کو بچپن سے ہی پہلوانی کا شوق تھا۔بچپن میں وہ  کھیتوں میں کام کرتے تھے۔

اُنہوں نے 1966ء میں رستم پنجاب اور 1978ء میں رستم ہند کا خطاب حاصل کیا۔ دارا سنگھ نے ہندوستانی طرز کی پہلوانی کی باقاعدہ تربیت لی جو ریت کے اکھاڑے میں لڑی جاتی ہے۔ دارا سنگھ ہندوستان کے کشتی کے ٹورنامنٹوں کی بڑی مقبول شخصیت تھے۔وہ ہندوستان کی نوابی ریاستوں کی دعوت پر بھی وہاں جایا کرتے تھے۔انہوں نے کئی عظیم پہلوانوں کو مات دی اور امریکہ میں کئی پیشہ ور پہلوانوں کو ہرایا۔

وہ 1947 میں سنگاپور چلے گئے تھے اور کوالالمپور میں ترلوک سنگھ کو ہراکرملیشیا میں چیمپئن بن گئے تھے۔انہوں نے پیشہ ور پہلوان کے بطور مشرق بعید کے تقریباً تمام ممالک کا دورہ کیا۔داراسنگھ نے لوتھیز اور  زیباسکو جیسے بین اقوامی پہلوانوں سے مقابلہ کیا ۔انہوں نے 500 سے زیاہ پیشہ ورانہ کشتیاں لڑیں اور کبھی شکست کا منہ نہیں دیکھا۔ دارا سنگھ نے 1953 میں پیشہ ورانہ انڈین ریسلنگ چمپئن شپ جیتی اور 1959 میں کینیڈا کے چمپئن جارج نگوڈنوکر کوہراکر دولت مشترکہ چمپئن ٹرافی جیتی۔

انہوں نے 1983 میں  کشتی سے ریٹائرمنٹ لے لی اور 1989 میں اپنی خودنوشت سوانح میری آتم کتھا پنجابی میں شائع کی۔سات سال بعد انہیں نیوزی لینڈ کے ہال آف فیم میں شامل کیا گیا۔ وہ 2003 سے2009 تک بھارتی راجیہ سبھا کے ممبر بھی رہے۔ وہ 1983 میں ہارٹ اٹیک کے باعث ممبئی میں واقع اپنے گھر میں انتقال کر گئے ۔

دار اسنگھ کی مشہور فلموں میں فولاد، رستم، مرد، سب استاد ہیں ، سکندراعظم، ٹارزن اور کنگ کانگ، جب وہ میٹ اور میرا نام جوکر شامل ہیں