والدہ نے سکول وین چلا کر تعلیمی اخراجات پورے کئے، عائشہ عمر

والدہ نے سکول وین چلا کر تعلیمی اخراجات پورے کئے، عائشہ عمر
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

 سٹی42:ڈرامہ و فلم انڈسٹری کی خوبصورت اداکارہ اور ماڈل عائشہ عمر نے اپنے ایک انٹرویو میں انکشاف کیا کہ اُن کے تعلیمی اخراجات پورے کرنے کے لئے والدہ سکول وین چلایا کرتی تھیں۔

تفصیلات کے مطابق مشہور ڈرامے ’بلبلے‘ سے شہرت حاصل کرنے والی اداکارہ عائشہ عمر نے اپنے ایک انٹرویو میں اپنے بچپن کے مشکل ترین دنوں سے متعلق بات کرتے ہوئے بتایا کہ ’جب  میری عمر ڈیڑھ سال تھی تو والد کا انتقال ہوگیا تھا، جس کے بعد امی نے مجھے اور بھائی کو اکیلے پالا تھا‘اداکارہ نے بتایا کہ ہم نے بہت مشکل سال دیکھےہیں، جس وقت ابو کا انتقال ہوا اُس وقت امی جوان تھیں مگر انہوں نے ہماری خاطر بہت بڑی قربانی دی اور شادی نہیں کی۔عائشہ عمر نے بتایا کہ والد کے انتقال کے فوراً بعد امی کراچی سے لاہور منتقل ہوگئیں تاکہ وہ ابو کی موت کے غم سے باہر آ سکیں، ہم دونوں بہن بھائیوں نے تعلیم بھی لاہور میں حاصل کی،امی کا شروع سے صرف اسی ایک بات پر فوکس تھا کہ ہمیں اچھی تعلیم ملے۔اداکارہ نے اپنے انٹرویو میں بتایا کہ ہم نے جس سکول میں داخلہ لیا وہاں کی فیس اور دیگر اخراجات بہت زیادہ تھے جو ہم برداشت نہیں کرسکتے تھے مگر امی نے ٹیوشنز پڑھائیں، ٹیچنگ کی اور یہاں تک کہ سکول وین بھی چلائی پھر پیسے جوڑ جوڑ کر ہمارے تعلیمی اخراجات پورے کئے۔انہوں نے بتایا کہ امی نے لاہور میں 12 سال سکول وین چلائی تھی، تب کہیں جا کر ہم دونوں بہن بھائیوں نے اچھی تعلیم حاصل کی۔عائشہ عمر نے بتایا کہ امی ایک سکول میں پڑھاتی تھیں ، اس کے علاوہ اور کچھ کرنے کے لئے اُن کے پاس وقت نہیں تھا اس لئے انہوں نے اُسی سکول کے بچوں کو پنک اینڈ ڈراپ کرنا شروع کردیا اور ایسےانہوں نے ہمارے تعلیمی اخراجات اور گھر کے خرچے پورے کئے۔

شادی سے متعلق پوچھے جانے والے ایک سوال کے جواب میں عائشہ عمر نے بتایا کہ اُن کی زندگی میں کوئی تھا جسے وہ پسند کرتی تھیں مگر اُس وقت والدہ اور بھائی کی ذمہ داری تھی تو اس لئے نہیں سوچا مگر اب فیملی شروع کرنے کے حوالے سے سوچ رہی ہیں۔ اس کے علاوہ انہوں نے مزید بتایا کہ وہ جب 22 سال کی تھیں تو اُن کے ساتھ ہراسانی کا واقعہ پیش آیا مگر وہ چند وجوہات کی بنا پر نام نہیں بتا سکتیں۔