تعلیمی ادارے بند نہ کرنے کا فیصلہ

 تعلیمی ادارے بند نہ کرنے کا فیصلہ

 (مانیٹرنگ ڈیسک) محکمہ تعلیم سندھ کی اسٹیئرنگ کمیٹی نے صوبے میں تعلیمی ادارے بند نہ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

وزیر تعلیم سندھ سعید غنی کی زیر صدارت محکمہ تعلیم کی اسٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں سیکرٹری سکولز، سیکرٹری کالجز اور تعلیمی بورڈز کے چیئرمین شریک ہوئے، اجلاس میں کورونا کی صورت حال اور تعلیمی اداروں کی بندش سے متعلق امور کا جائزہ لیا گیا۔

اسٹیئرنگ کمیٹی نے اجلاس میں تعلیمی ادارے بند نہ کرنے کا فیصلہ کیا، اجلاس میں یہ فیصلہ بھی ہوا ہے کہ جو تعلیمی ادارے آن لائن ایجوکیشن کی طرف جانا چاہیں جا سکتے ہیں۔

 صوبائی وزیر سعید غنی نے کہا کہ آج کے اجلاس کا مقصد اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کر کے سندھ کا مؤقف طے کرنا تھا، چاہتے تھے کہ سندھ میں تعلیم سے متعلق اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے فیصلے کیے جائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اسٹیئرنگ کمیٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ سندھ میں موسم سرما کی تعطیلات بھی نہیں ہو گی، تعلیمی اداروں میں ایس او پیز پر مزید سختی سے عمل کیا جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ کورونا کے کیس بڑھ رہے ہیں اس میں کوئی دو رائے نہیں ہے، گزشتہ دنوں کے اعداد و شمار کو دیکھا جائے تو مثبت کیسز کی شرح 3.7 فیصد تک بھی گئی۔

سعید غنی نے بتایا کہ وفاق موسم سرما کی تعطیلات 25 دسمبر سے 10 جنوری تک کرنے کا کہہ رہا ہے، اجلاس میں این سی او سی کی تجاویز پر بھی مشاورت کی گئی۔

ان کا کہنا تھا وفاق کا مؤقف ہے کہ 25 نومبر تا 24 دسمبر تک بچوں کو اسکول کے بجائے گھر پر تعلیم دی جائے، والدین سکولز جا کر اساتذہ سے ہفتہ وار ہوم ورک لیں۔ 

وزیر تعلیم سندھ نے کہا کہ اسٹیئرنگ کمیٹی کے فیصلوں سے این سی او سی کو آگاہ کر دیا جائے گا اور پھر این سی او سی کے اجلاس میں جو بھی فیصلہ ہو گا، اسے وزیراعلیٰ سندھ اور  وزیر صحت سندھ سے مشاورت کے بعد حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔