پولیس اہلکار کی حاملہ خاتون سے زیادتی، ویڈیو بھی بناتا رہا

Pregnant Women Rape by Policeman
کیپشن: Pregnant Women Rape
سورس: Google
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

عابد چودھری: معاشرے میں چوری، ڈکیتی، راہزنی، خواتین اور بچیوں سے زیادتی کے واقعات خاص اضافے کے ساتھ بڑھ رہے ہیں، شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے والے بھی اس گھناؤنے عمل میں برابر کے ملوث ہیں۔ سپیشل برانچ میں تعینات اہلکار نے حاملہ خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا۔

تفصیلات کے مطابق یہ افسوس ناک واقعہ لاہور کے علاقہ چونگی امر سدھو میں پیش آیا، جہاں سپیشل برانچ میں تعینات اہلکار نے حاملہ خاتون سے زبردستی زیادتی کی۔ ایف آئی آرکے متن کے مطابق منزہ اپنے قریبی عزیز عدنان کو اس کے فلیٹ پر کھانا دینے گئی، کچھ ہی دیر بعد اہلکار عمران اور اکرام بھی فلیٹ میں داخل ہوگئے۔

ملزمان اپنے سامنے عدنان کو منزہ کے ساتھ زنا کرنے کا کہتے رہے جبکہ عدنان اور منزہ کو اپنے فلیٹ میں لیجا کر برہنہ وڈیوز بھی بناتے رہے۔  سپیشل برانچ میں تعینات اہلکار عمران نے حاملہ خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنایا اور وڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل کرنے کی دھمکیاں دے کر بلیک میل بھی کرتے رہے۔

پولیس نے متاثرہ خاتون کی درخواست پر ملزموں کے خلاف مقدمہ درج فیکٹری ایریا کارروائی عمل میں لاتے ہوئے اہلکار عمران اور اکرام دونوں کو گرفتار کر لیا ہے اور جینڈر سیل کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ 

دوسری جانب اہلکار عمران کو معطل کر دیا گیا ہے، اہلکار عمران ہیڈ کوارٹر میں کمپیوٹرآپریٹر تعینات تھا۔ سپیشل برانچ حکام کا کہنا ہے کہ عمران کے خلاف محکمانہ کاروائی بھی کی جا رہی ہے۔ 

قبل ازیں نواں کوٹ میں بھی واقعہ پیش آیا تھا جہاں پولیس اہلکار نے کرایہ دار لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بناڈالا تھا۔ اہلکار ملک کاشف نے کرایہ دار کی 14 سالہ بیٹی سے زیادتی کی، نواں کوٹ پولیس نےزیادتی کا مقدمہ درج کیا تھا مگر کے باوجود ملزم ملک کاشف گرفتار نہ ہو سکا تھا۔