رات بارہ بجے کے بعد پرویز الہی سابق وزیراعلی پنجاب کہلائیں گے؟

Pervaiz Elahi
کیپشن: Pervaiz Elahi
سورس: google
Stay tuned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

ویب ڈیسک :  وزیر اعلیٰ پنجاب نے گورنر کی ہدایت پر اعتماد کا ووٹ نہیں لیا تاہم اب وفاق کے ری ایکشن کا انتظار ہے۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی نے گورنر پنجاب کی ہدایت کے باوجود اسمبلی اجلاس نہیں بلایا۔ جس کے بعد مسلم لیگ ن کا کہنا ہے کہ پرویز الہیٰ وزیر اعلیٰ پنجاب نہیں رہے اور وہ اب ڈی نوٹیفائی ہوں گے۔

تحریک انصاف کی قیادت نے وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت کسی قسم کا ایڈونچر کرنے کی کوشش نہ کرے۔

واضح رہے کہ گورنر پنجاب نے صوبائی اسمبلی کا اجلاس بدھ کو 4 بجے طلب کیا تھا اور وزیر اعلیٰ  پنجاب کو اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کی ہدایت کی تھی۔اس موقع پر پنجاب اسمبلی کے باہر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے اور ایوان وزیر اعلیٰ کے باہر کنٹینرز لگائے گئے تھے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب پرویزالہیٰ کی زیر صدارت مسلم لیگ ق کا اجلاس ہوا۔ جس میں ق لیگ کی پارلیمانی پارٹی نے پرویز الہیٰ کی قیادت پر بھرپور اعتماد کا اظہار کیا۔ پارلیمانی پارٹی نے تمام فیصلوں کا اختیار وزیر اعلیٰ پرویز الہیٰ کو دے دیا۔

اس موقع پر پرویز الہیٰ نے کہا کہ عمران خان کے ساتھ دل و جان سے ہیں اور ساتھ دیتے رہیں گے۔ مسلم لیگ ق متحد ہے اور متحد رہے گی۔ افواہیں پھیلانے والے مخصوص ایجنڈے پر چل رہے ہیں۔