نوجوان لڑکی نےخودکشی کرلی

نوجوان لڑکی نےخودکشی کرلی

(فہد علی)خودکشیوں کے بڑھتے ہوئے رجحان نےشہر میں خوف و ہراس کی فضا طاری کردی ہے۔ ہرروزکوئی نہ کوئی شخص اپنے ہاتھوں زندگی کا خاتمہ کررہا ہے،تھانہ لیاقت آباد کے علاقے پیکو روڈ پر بیس سالہ لڑکی کی گھریلو ناچاقی پر خودکشی کرلی، پولیس نے لاش کو مردہ خانے منتقل کر کے کارروائی شروع کردی۔

پولیس کے مطابق پیکو روڈ کی رہائشی بیس سالہ کومل نے گھریلو ناچاقی سے تنگ آکر گلے میں پھندہ ڈال کر زندگی کا خاتمہ کر لیا،اطلاع ملنے پر پولیس نے موقع پر پہنچ کر شواہد اکٹھے کرکےلاش کو مردہ خانے منتقل کردیا۔ پولیس کا کہنا تھا کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد مزید حقائق واضح ہوں گے۔

واضح رہے کہ خودکشی کی وجوہات گھریلو جھگڑے، جہالت اور ذہنی تناؤ ہے۔ زیادہ تر واقعات ذاتی و گھریلو مسائل کہ وجہ سے رونما ہوتے ہیں۔ خودکشی کرنے والوں میں ان پڑھ افراد کے ساتھ پڑھے لکھے نوجوانوں کی بھی اکثریت شامل ہیں۔علاوہ ازیں خودکشی کے بڑھتے ہوئے واقعات نے کئی سولات کو جنم دے دیا ہے کہ تمام تر خودکشیاں پھندا ڈال کر کیوں ہوتی ہیں اور مرنے والوں کی اکثریت شادی شدہ خواتین کی ہی کیوں ہوتی ہے؟

 دوسری جانب شہر میں خواتین، بچوں پر خوف کے بادل منڈلارہے ہیں،زیادتی،چوری، ڈکیتی، راہزانی اور قتل کے سنگین واقعات کسی آسیب  کی طرح پیچھے پڑے ہوئے ہیں،ان خوفناک وارداتوں میں آئے روز کمی کی بجائے اضافہ ہورہا ہے.

 گزشتہ دنوں تھانہ گجر پورہ کی حدود میں دو نوجوان بہنوں کی لاشیں برآمد ہوئیں تھیں۔ دونوں لڑکیاں گھر میں اکیلی تھیں۔ والدین گھر واپس آئے تو لاشیں ملیں۔ پولیس نے لڑکیوں کے والد کو حراست میں لے لیارکھا ہے، پولیس کی جانب سے جاں بحق لڑکیوں کی شناخت 16 سالہ کرن اور 17 سالہ مریم کے نام سے ہوئی۔