سونیا حسین کیوں برہم؟

سونیا حسین کیوں برہم؟

ویب ڈیسک:      ادکارہ سونیا حسین نے کا کہنا ہے کہ  کیا یہ دوہرا معیار نہیں کہ ہم اچھے مواد کو بنانے کی بات تو کرتے ہیں مگر ایسے ڈراموں کو ایوارڈز کے لیے نامزد نہیں کرتے۔

ادکارہ سونیا حسین  نے  سوشل میڈیا ویب سائٹ  انسٹاگرام اسٹوری میں ’لکس اسٹائل ایوارڈز‘ کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے سوال کیا کہ ایسے ایوارڈز کے لیے اچھے مواد کو ترجیح دی جاتی ہے یا کمائی کرنے والے ڈراموں کو؟    انہوں نے اپنے متعدد مقبول ڈراموں ’میری گڑیا، عشق زہ نصیب، نازو اور ایسی ہے تنہائی‘ کے نام لکھتے ہوئے شکوہ کیا کہ حیران کن طور پر ان میں سے کسی ایک کو بھی نامزدگی نہیں ملی۔سونیا حسین نے لکھا کہ وہ ایوارڈز نامزدگیوں کے معاملے پر 7 سال سے خاموش تھیں لیکن کیا واقعی مذکورہ ڈراموں میں سے کوئی بھی ایک ایسا ڈراما نہیں تھا، جسے ایک نامزدگی ملتی؟           اپنی اسٹوری میں انہوں نے لکھا کہ ایسے ملک میں جہاں معروف اداکاروں کو بعد از مرگ ایوارڈز دیے جاتے ہوں، وہاں سوال کرنے والی وہ کون ہوتی ہیں؟

واضح رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ کسی شوبز شخصیت نے لکس اسٹائل ایوارڈز کی نامزدگیوں پر تنقید کی ہو، ماضی میں بھی اس کی نامزدگیوں پر اداکار آواز اٹھاتے رہے ہیں۔