محکمہ ایکسائز اربوں روپے کا مقروض نکلا

محکمہ ایکسائز اربوں روپے کا مقروض نکلا

( علی ساہی ) محکمہ ایکسائز عوام کا ڈیڑھ ارب کا نادہندہ ہوگیا۔ کنٹریکٹ ختم ہونے کے باوجود شہریوں سے نمبر پلیٹس کی فیس کی وصولی کا عمل دھڑادھڑ جاری، پچھلے 2 سال کے دوران محکمہ ایکسائز نے فیس وصولی کے باوجود 20 لاکھ کے قریب نمبر پلیٹس جاری نہ کی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق کنٹریکٹ ختم ہونے کے باوجود شہریوں سے نمبر پلیٹس کی فیس کی وصولی کا عمل دھڑادھڑ جاری ہے۔ گاڑی کی رجسٹریشن کے ساتھ ہی نمبر پلیٹس کی فیس وصول کی جاتی ہے جبکہ شہریوں کی جانب سے بروقت فیس ادا کرنے کے باوجود نمبر پلیٹس کا اجرا نہیں کیا جارہا ہے۔ ایکسائز حکام کے مطابق ڈیڑھ لاکھ نمبر پلیٹس گاڑیوں جبکہ 18 لاکھ کے قریب موٹرسائیکلوں کی نمبر پلیٹس زیرالتوا ہیں۔ گاڑیوں کی نمبر پلیٹس کی مد میں ساڑھے 18 کروڑ سے زائد کی فیسیں وصول کی گئیں۔

موٹرسائیکلوں کی فیس مد میں 1 ارب 32 کروڑ کے قریب فیس وصول کی گئی۔ پچھلے 2سال سے کنٹریکٹ جاری نہ ہونے سے دن بدن زیرالتوا پلیٹس کی تعداد بڑھتی جارہی ہے جس کی بنیادی وجہ بار بار ڈی جیز کی تبدیلی کی وجہ سے معاملات تاخیر کا شکار ہورہے ہیں۔ 

دوسری جانب حکومت نے این آر ٹی سی سے کنٹریکٹ کی منظوری دے دی ہے۔ بیرون ملک بھجوائے گئے نمبر پلیٹس کے سیمپلز کی منظوری کے بعد اجرا شروع ہوگا۔ 18 لاکھ سے زائد پرانی نمبر پلیٹس جبکہ 2 لاکھ کے قریب یونیورسل نمبر پلیٹس تاخیر کا شکار ہیں۔