انار کلی دھماکہ؛ ڈیوائس رکھنے والے دہشتگرد کی تصویر منظر عام پر

 anarkali Terrorist pic
کیپشن: Anarkali follow up
سورس: google
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

(عرفان ملک)انارکلی دھماکہ کی تفتیش میں پیش رفت ،سٹی فورٹی ٹو نے جائے وقوعہ پر ڈیوائس رکھنے والے دہشت گرد کی تصویر حاصل کرلی، قانون نافذ کرنے والے ادارے تاحال دہشت گردی کا نیٹ ورک بریک کرنے میں کامیاب نہ ہو سکے ۔

 تحقیقاتی اداروں کے مطابق جائے وقوعہ پر ڈیوائس رکھنے والا شخص اکیلا آیا ،نامعلوم دہشت گرد نے پینٹ شرٹ اور جیکٹ پہن رکھی تھی، دہشت گرد نے طارق انٹرپرائز کے سامنے بیگ رکھا اور ڈیوائس رکھنے کے بعد ملزم رکشہ پر بیٹھ کر لاری اڈا گیا ۔

قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ذرائع کے مطابق ملزم کی شناخت کی کوششیں جاری ہیں، تاحال کوئی گرفتاری نہیں ہوسکی، تاہم دہشت گردوں کا نیٹ ورک بریک کرنے کے لئے تفتیش جاری ہے،ادھر جائے وقوعہ کے قریب سے حراست میں لئے گئے مزدور بھی رہا کردیئے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ انارکلی دھماکے میں ملوث شخص دھماکہ خیز مواد رکھنے کے بعد رکشہ پر بیٹھ کر سبزی منڈی کی جانب فرار ہوا، کیمروں کی پہنچ سے دور ہونے کے بعد تاحال مرکزی کردار کو حراست میں نہ لیا جا سکا ۔

 ذرائع کے مطابق رکشہ ڈرائیور نے دہشت گرد کو لاری اڈا کے قریب اتارا ، لاری اڈہ سبزی منڈی کے قریب اترنے کے بعد دہشت گرد کیمروں کی رینج میں نہیں آیا ،قانون نافذ کرنے والے اداروں نے دہشت گرد کی لاری اڈا تک موومنٹ کیمروں سے ٹریک کی ۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ دہشت گرد کو لاری اڈا تک لےجانے والے رکشہ ڈرائیور کو حراست میں لیا گیا ،رکشہ ڈرائیور کا دھماکے میں ملوث ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا، ابتدائی تفتیش میں رکشہ ڈرائیور نے بیان دیا کہ مبینہ دہشت گرد پنجابی میں بات کر رہا تھا۔