150 مردوں نے میرا ریپ کیا، برطانوی دوشیزہ کا دل دہلا دینے والا بیان

150 men rape a girl in UK
150 men rape a girl

 ویب ڈیسک : برطانیہ میں نوجوان لڑکی نے انکشاف کیا ہے کہ اسے ڈرا دھمکا کر 13 برس کی عمر میں زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ تین سال کے دوران 150  مردوں نے میرا ریپ کیا۔

سکائی نیوز کی خصوصی  رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ  یارک شائر کے قریب گاؤں ہمبرسائڈ کی رہائشی تین برطانوی لڑکیوں کو ایک گینگ کم عمری میں اپنا نشانہ بنا کر انہیں بطور جنسی غلام استعمال کرتے رہے۔ لڑکیوں کی جانب سے فراہم کردہ ثبوت ، تصاویر اور موبائل فون چیٹ بھی قانون نافذ کرنے والے اداروں کو فراہم کردی گئی ہیں ۔ 

 دوسال تک جاری رہنے والے  آپریشن '' مارکس مین ''  میں جان توڑ کوششوں کے بعد پولیس نے ملزمان کو گرفتار کیا۔ کیس کی مرکزی کرداردوشیزہ سارا( یہ اس کا اصل نام نہیں) کا کہنا  تھا کہ  تیرہ سال کی عمر سرکاری فلیٹ میں دو افراد نے اسے ہتھوڑی، ہتھکڑی، ٹیزر گن اور سوؤں سے ڈرا کر اس سے اس کا بچپن چھین لیا۔ 

 سارا نے مزید بتایا کہ ان افراد نے اسے ڈرا دھمکا کر اپنی دو مزید سہیلیوں کی بھی لانے کے لئے کہا۔  جس کے بعد وہ میرا کسی بکنے والی چیز کی طرح سودا کرتے رہے ۔ اس نے آنسو بہاتے ہوئے کہا ایک ہی روز میں دس سے گیارہ مرد بھی اسے زیادتی کا نشانہ بناتے رہے۔

سارا نے اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی کے ذمہ دار 11 ملزمان کی نشاندہی کی ہے ۔ سارا نے پولیس کو مزید بتایا کہ اس گینگ کے پرائمری جماعت کی لڑکیوں کو بھی اپنانشانہ بنایا  جن کی عمر محض آٹھ نو برس تھی۔ سارا کے مطابق گینگ کے کئی افراد زیادتی کے عمل کی ویڈیوز بھی بناتے تھے۔ ہمبر سائڈ پولیس نے تفتیش کے بعد 34 مشکوک افراد کو گرفتار کیا ہے  جبکہ موبائل فونز سمیت 150 ڈیوائسز کو ضبط کیا ہے ۔ تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ انہیں ملزمان کو کیفر کردار پہنچانے کےلئے ناکافی شہادتوں کے مسائل کا سامنا ہے۔