منی لانڈرنگ، حمزہ شہباز کا ایف آئی اے کے سامنے اظہار لاعلمی

Hamza Shahbaz FIA
Hamza Shahbaz

 عرفان ملک: پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز شوگر اسکینڈل اور منی لانڈرنگ کیس میں ایف آئی اے کی تحقیقاتی ٹیم کے سامنے پیش ہوگئے۔ حمزہ شہباز نے سوالات کے جوابات جمع کروادئے، حمزہ شہباز سے ایک گھنٹے تک ایف آئی اے کی پانچ رکنی ٹیم نے تفتیش کی۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کے بعد ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز نے بھی شوگر اسکینڈل اور منی لانڈرنگ کیس میں ایف آئی اے سوالات کے جوابات جمع کروادیئے۔ حمزہ شہباز سے ایف آئی اے کی پانچ رکنی ٹیم نے ایک گھنٹے تک تفتیش کی۔ حمزہ شہباز اور انکے والد شہباز شریف پر شوگر اسکینڈل اور منی لانڈنگ کیس میں پچیس ارب کے فراڈ کا الزام ہے۔ 

حمزہ شہباز نے اکاؤنٹس میں اربوں روپے جمع کروانے والوں سے لا علمی کا اظہار کر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ 2008 سے 2018 تک ممںبر قومی اسمبلی رہا ہوں، فیٹف قوانین اور اینٹی منی لانڈرنگ قانون 2010 سے بھی لا علم نکلے۔ انسداد کرپشن ایکٹ 1947 سے بھی واقف نہیں ہوں، سیاست میں مصروف ہونے کی وجہ سے مجھے نہیں پتہ کہ میرے ذاتی بینک اکاؤنٹس میں پیسے کون جمع کرواتا رہا۔ لاہور میں عوامی پراجیکٹس سے متعلقہ انجنیرز، کنسلٹنٹس اور ٹھیکیداروں سے کبھی کوئی ملاقات نہیں کی۔

اپوزیشن لیڈر کا کہنا ہے کہ سلمان شہباز اور رمضان شوگر ملز کے ملازمین بیرون ملک کیوں فرار ہوئے مجھے علم نہیں۔ رمضان شوگر ملز کا چیف ایگزیکٹو رہا ہوں لیکن چپڑاسی اور کلرکوں کے اکاؤنٹس میں 25 ارب روپے کس نے جمع کروایا اس کی ذمہ داری میری نہیں ہے۔ رمضان شوگر ملز کے ڈائریکٹر  اور میرے خاندان کے بیرون ملک کوئی خفیہ اثاثے نہیں ہیں، الزامات کا جواب میری قانونی ٹیم عدالت میں دے گی۔ 

ایف آئی اے آفس کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی جبکہ ریگل چوک سے ایف آئی اے آفس تک تین جگہ پر بیرئیرز لگائے تھے. لیگی کارکن کی بڑی تعداد بھی قائد سے اظہار یکجہتی کیلئے پہنچی۔