بیگو ،ٹک ٹاک صارفین کے لیے بری خبر

بیگو ،ٹک ٹاک صارفین کے لیے بری خبر

عثمان الیاس : لاہور ہائیکورٹ میں بیگو ، ٹک ٹاک، لائیکی پر پابندی کیلئے درخواست دائر کردی گئی، درخواست میں پی ٹی اے،ایف آئی اےسمیت بیگو، ٹک ٹاک، لائیکی کے مالکان کو فریق بنایا گیا ہے، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ ان ایپلیکیشنز کے ذریعے بے ہودگی،عریانیت اور غیر اخلاقی حرکات کو فروغ دیا جارہاہے.

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں وقاص انور گجر ایڈوکیٹ نے درخواست دائر کی۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ بیگو، ٹک ٹاک، لائیکی اور دیگر سوشل میڈیا ایپلیکیشنز کے ذریعے نوجوان اپنا وقت ضائع کررہے ہیں۔ پاکستان اسلامی ملک ہے،ریاست کی ذمہ داری ہے کہ اسلامی شعائر کو فروغ دیا جائے، ٹک ٹاک کیلئے ویڈیوز بناتے ہوئے2019,20 میں دانیال خان،عمارحیدر اور تنویر سمیت کئی نوجوان جانیں کھو چکے ہیں

سوشل میڈیا ایپلیکیشنز نوجوانوں کو خود غرضی کی طرف مائل کررہی ہیں،بیگو اور دیگر سوشل میڈیا ایپلیکیشنز ہم جنس پرستی کو بھی فروغ دے رہی ہیں،ان پر پابندی کیلئے پی ٹی اے سمیت دیگر محکموں کو درخواستیں دیں مگر کوئی شنوائی نہ ہوئی۔عدالت سے استدعا ہے کہ بیگو،لائیکی، ٹک ٹاک سمیت تمام سوشل میڈیا ایپس پر مکمل پابندی عائد کی جائے،اس کے ساتھ ساتھ دیگر ایپس کی مانیٹرنگ کیلئے قانون سازی کے احکامات دیے جائیں۔