موٹروے زیادتی کیس، متاثرہ خاتون نے ملزمان کو پہچان لیا

(سٹی 42) موٹروے زیادتی کیس  میں بڑی پیشرفت ہوئی ہے، متاثرہ خاتون نےواقعہ میں ملوث دونوں ملزمان عابد ملہی اور شفقت کو شناخت کرلیا۔

ایس ایس پی انویسٹی گیشن عبدالغفار قیصرانی کے مطابق موٹروے زیادتی کیس میں ملوث دونوں ملزمان کی شناخت پریڈ کا عمل لاہور کی کیمپ جیل میں مکمل کیا گیا، دونوں ملزمان عابد ملہی اور شفقت کو متاثرہ خاتون کے سامنے لایا گیا، متاثرہ خاتون نے دونوں ملزمان کو پہچان لیا۔

عابد ملہی کو پولیس نے واقعہ کے 33 روز کے بعد مانگا منڈی سے گرفتار کیا تھا جس کے بعد اسے لاہور لایا گیا اور عدالت میں پیش کیا گیا ،عدالت نے عابدملہی کو شناخت پریڈ کے عمل کیلئے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا تھاجبکہ دوسرے ملزم شفقت کو دیپالپور سے گرفتار کیا گیا تھاجو اس وقت جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں ہے جہاں اس سے مزید تفتیش کی جارہی ہے۔

پولیس ذرائع کے مطابق ملزم عابدملہی نے دوران تفتیش اعترف جرم بھی کرلیا، ملزم نے دوران تفتیش بتایا کیا کہ 9 ستمبر کو وہ اور شفقت واردات کی نیت سے کورول گاؤں سے نکلے، موٹر وے پر گاڑی کے جلتے بجھتے انڈی کیٹر دیکھ کر اس کے پاس پہنچے اور گاڑی کا شیشہ توڑ کر خاتون کو زبردستی باہر نکالا، لوٹ مار کے بعد اسے زیادتی کا نشانہ بنایا اور فرار ہوگئے۔  واردات کے بعد ننکانہ اور پھر وہاں سے بہاولپور چلا گیا،جہاں ایک ماہ تک ماسک پہن کر پبلک ٹرانسپورٹ میں پھرتا رہا، پیسے ختم ہونے پر بیوی سے رابطہ کیا جو گرفتاری کا سبب بنا۔ 

 واضح رہے کہ 9 ستمبر کو لاہور کے علاقے گجر پورہ میں موٹر وے پر خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کا واقعہ پیش آیا تھا،2 افراد نے موٹر وے پر کھڑی گاڑی کا شیشہ توڑ کر خاتون اور اس کے بچوں کو نکالا، موٹر وے کے گرد لگی جالی کاٹ کر سب کو قریبی جھاڑیوں میں لے گئے اور پھر خاتون کو بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا۔