اسرائیلی پولیس نے اپنے شہریوں کو بھی نہ بخشا۔۔۔ سائبر جاسوسی شروع

 اسرائیلی پولیس نے اپنے شہریوں کو بھی نہ بخشا۔۔۔ سائبر جاسوسی شروع
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

 ویب ڈیسک :  اسرائیلی اخبار ’کیلکالسٹ‘ نے دعویٰ کیا ہے کہ اسرائیلی پولیس نے متنازعہ ’پیگاسس اسپائی ویئر‘ سے اپنے ہی شہریوں کی سائبر جاسوسی شروع کردی ہے۔

اسرائیلی پولیس نے متنازعہ ’پیگاسس اسپائی ویئر‘ سے اپنے ہی شہریوں کی سائبر جاسوسی شروع کردی ہے۔ اس انکشاف کے بعد اسرائیلی حکومت نے مقامی پولیس کے خلاف تفتیش کا آغاز کردیا ہے اور اس حوالے سے اٹارنی جنرل اسرائیل، اویشائی میندلبلت نے وہاں کے پولیس کمانڈر کوبی شبتائی کو لکھے گئے ایک خط میں حکم دیا ہے کہ 2020 سے 2021 کے دوران وائرٹیپنگ اور سائبر جاسوسی کا تمام ریکارڈ جمع کرایا جائے۔

مذکورہ اخبار نے یہ اسرائیلی پولیس کی اس حرکت کو جمہوریت کےلیے خطرہ قرار دیا تھا، البتہ اپنے ذرائع کے بارے میں کچھ نہیں بتایا تھا۔واضح رہے کہ اسرائیلی سکیورٹی اداروں کو قانونی طور پر کسی بھی شہری کی نگرانی کا اختیار حاصل ہے۔

قبل ازیں بدھ کے روز اسرائیلی وزارتِ انصاف نے بھی مطالبہ کیا تھا کہ اسرائیلی سکیوریٹی اداروں کی جانب سے پیگاسس اسپائی ویئر کے ذریعے ان شہریوں کی سائبر جاسوسی کے الزامات کی تفتیش کروائی جائے کہ جنہوں نے سابق وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو کے خلاف احتجاجی مظاہرے کیے تھے۔