ٹینس سٹار اعصام الحق نےڈیوس کپ ایونٹ کا بائیکاٹ کردیا

 ٹینس سٹار اعصام الحق نےڈیوس کپ ایونٹ کا بائیکاٹ کردیا

(حافظ شہبازعلی) قومی ٹینس سٹار اعصام الحق نے بھارتی اثرورسوخ پر انٹرنیشنل ٹینس فیڈریشن کی طرف سے ڈیوس کپ مقابلے پاکستان سے باہر منتقل کرنے پر ایونٹ کا بائیکاٹ کردیا۔

اعصام نے پاکستان ٹینس فیڈریشن کے سربراہ سلیم سیف اللہ کو خط لکھ کر آگاہ کردیا ہے کہ وہ آئی ٹی ایف کے فیصلے کے خلاف بطور احتجاج اس ماہ ڈیوس کپ ٹائی میں شرکت نہیں کریں گے،انٹرنیشنل ٹینس فیڈریشن نے نومبر کے آغاز میں اعلان کیا تھا کہ پاکستان میں ہونے والی پاک ، بھارت ایشین اوشینا گروپ کی ڈیوس کپ ٹائی اب پاکستان کی بجائے نیوٹرل وینیو پر ہوگی،آئی ٹی ایف نے بھارتی کھلاڑیوں کے پاکستان آنے سے انکار اور سکیورٹی ریویو کے بعد یہ فیصلہ کیا جسے اعصام الحق نے جانبدار اور غیرمنصفانہ قرار دیا۔

پی ٹی ایف کے سربراہ سلیم سیف اللہ کے نام خط میں اعصام الحق نے اپنے خط میں بھارتی ٹینس حکام کو بھی آڑے ہاتھ لیا ہے اور ان کا کہنا تھا کہ ان کے پاکستان نہ آنے کے لیے بہانے قابل قبول نہیں اور یہ کہنا کہ یہاں ان کو مناسب سکیورٹی نہیں مل سکتی ، توہین آمیز ہے۔

اعصام الحق نے کہا کہ سری لنکا کی کرکٹ ٹیم لاہور میں کھیل چکی ہے، بنگلا دیش کی ٹیمیں مختلف شہروں میں کھیل چکی ہیں، برطانوی شاہی جوڑا اسلام آباد اور لاہور کی سیر کرچکا ہے، ہالینڈ کی وزیر اعظم پاکستان آرہی ہیں، ایسے میں آل انڈیا ٹینس ایسوسی ایشن کے کہنے پر مقابلے بیرون ملک منتقل کردینا پاکستانی عوام سے زیادتی ہے ۔

اعصام الحق نے پی ٹی ایف کو آگاہ کیا کہ اگرآئی ٹی ایف پاکستان کےخلاف جانبدارانہ، غیر منصفانہ اور تعصبانہ فیصلے کو تبدیل نہیں کرے گا تو وہ بطور احتجاج اس ٹائی میں شرکت نہیں کریں گے ٹینس اسٹار نے خط میں کہا کہ ہمیشہ پاکستان کی عزت اور نیک نامی کے لیے کھیلا ہوں اس لیے انٹرنیشنل ٹینس فیڈریشن کے اس دہرے معیار اور بھارتی رویے پر آواز بلند کررہا ہوں, ٹائی کھیلنے کا مطلب ہوگا کہ آپ اس جانبدارانہ فیصلے کو قبول کرتے ہیں اور وہ اس فیصلے کو قبول نہیں کرتے۔

واضح رہے کہ ڈیوس کپ مقابلے 29 نومبر سے اسلام آباد میں ہونا تھے جس میں بھارتی ٹیم کو یہاں آکر کھیلنا تھا تاہم آل انڈیا ٹینس ایسوسی ایشن کے دباؤپر اسے اب نیوٹرل ملک میں کرانے کا اعلان کیا گیا ہے۔

Sughra Afzal

Content Writer