نازیہ اور زوہیب کے والد بصیر حسن انتقال کرگئے

نازیہ اور زوہیب کے والد بصیر حسن انتقال کرگئے

رائل پارک (زین مدنی )پاکستان کی پہلی پاپ گلوکارہ نازیہ حسن اور گلوکار زوہیب حسن کے والد بصیر حسن انتقال کرگئے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بُک پر زوہیب حسن نے اپنے والد کے ہمراہ اپنے بچپن کی ایک یادگار تصویر شیئر کی جس کے ساتھ اُنہوں نے اپنے والد کے لیے الوداعی پیغام بھی لکھا۔الوداعی پیغام میں زوہیب حسن نے اپنے والد کو ہیرو قرار دیتے ہوئے لکھا کہ میرے ہیرو، میرے دوست جب تک ہم دوبارہ نہیں مل جاتے تب تک کے لیے آپ کو الوداع۔

"Goodbye my hero, my friend and the wind beneath my wings. Farewell until we meet again.. your son, Zoheb"

Posted by Zoheb Hassan on Friday, 15 May 2020

زوہیب حسن اِس وقت لندن میں موجود ہیں اور ابھی اُن کی جانب سے اِس بات کی کوئی تصدیق نہیں کی گئی ہے کہ وہ اپنے والد کی تدفین کے لئے پاکستان واپس آئیں گے یا نہیں۔ واضح رہے کہ بصیر حسن ایک بزنس مین تھے۔

 بصیر حسن کو کراچی میں ایک بزنس مین تھے جبکہ اُن کی بیٹی نازیہ حسن اور بیٹے زوہیب حسن کا شمار پاکستان کےمقبول ترین پاپ سنگرز میں ہوتا ہے۔3 اپریل 1965 کو کراچی میں پیدا ہونے والی نازیہ حسن عالمی شہرت اپنے نام کرکے اپنے والد سے قبل ہی 13 اگست سال 2000 کو اِس فانی دُنیا سے رخصت ہوگئی تھیں۔

نازیہ حسن نے پاپ گلوکارہ کے طور پر دنیا بھر میں پاکستان میں نام روشن کیا اور متعدد قومی اور بین الاقوامی ایوارڈز اپنے نام کئے۔نازیہ پاکستان کی پہلی پاپ گلوکارہ ہیں جنہوں نے فلم فیئر ایوارڈز کا اعزاز 15 سال کی عمر میں اپنے نام کیا۔