فیاض الحسن چوہان کے مولانا فضل الرحمان پر وار

 فیاض الحسن چوہان کے مولانا فضل الرحمان پر وار

سٹی 42 :وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمان نے ایک دفعہ پھر مکس اچار پارٹی کی کرپشن پر پردہ ڈالنے کی ٹھان لی ہے۔ اس کردار کو بخوبی نبھانے پر مولانا نے "مولانا نواز شریف زرداری" کا لقب حاصل کیا ہے۔ 

صوبائی وزیر کا کہنا ہے کہ نواز شریف کو پاکستان کے لیے سیکیورٹی رسک قرار دینے والے مولانا فضل الرحمان آج ان کا دفاع کرنے میں جتے ہوئے ہیں۔  ایک وقت تھا جب مولانا فضل الرحمان عورت کی حکمرانی کے خلاف فتوے دیا کرتے تھے۔ قسمت کی ستم ظریفی دیکھئے، آج وہی مولانا تھالی کے بینگن کی طرح بیگم صفدر اعوان کے جانب لڑھک آئے ہیں۔ مولانا فضل الرحمان آل شریف کی کرپشن، منی لانڈرنگ، اقربا پروری اور قوم سے بیوفائی کو تحفظ دینے کے لیے میدان میں نکل پڑے ہیں۔

فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ ن لیگ، پیپلز پارٹی سمیت بڑی پارٹیاں دو دن کی کال پر موچی دروازے، لیاقت باغ اور نشتر پارک میں لاکھوں کا مجمع اکٹھا کرتی تھیں۔آج وہی پارٹیاں احتساب سے بچنے کے لیے "مولانا نواز شریف زرداری" کا کندھا لینے پر مجبور ہیں۔  مہنگائی کی آڑ میں مکس اچار پارٹی اپنی کھربوں ڈالرز کی کرپشن کے احتساب سے نہیں بھاگ سکتی۔  عوام نے 2018 کے الیکشن میں بھی اور لاہور کے پہلے جلسے میں بھی انہیں مسترد کر کے انکی حیثیت یاد دلا دی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ قانون کے دائرے میں رہ کر احتجاج کرنے پر حکومت کی جانب سے کوئی رکاوٹ کھڑی نہیں کی جائے گی۔  قانون ہاتھوں میں لینے یا عدالتی، ریاستی اور جمہوری اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کی صورت میں قانون حرکت میں آئے گا۔