نوکری کی تلاش میں لاہور آنے والی لڑکی سے زیادتی

نوکری کی تلاش میں لاہور آنے والی لڑکی سے زیادتی

( سٹی 42 ) ایک اور بنت حوا ہوس کے پجاریوں کی درندگی کا بنی شکار، نولکھا پولیس نے لڑکی سے زیادتی کا مقدمہ درج کر لیا۔ 

لاہور کا شمار پاکستان کے ان شہروں میں ہوتا ہے جو ترقی کے حساب سے دیگر شہروں کے مقابلے کافی آگے ہے مگر بدقسمتی سے چوری، ڈکیتی، قتل اور زیادتی کے بڑھتے واقعات کی روک تھام میں پولیس خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔ معاشرے میں جنسی زیادتی اور تشدد کے واقعات میں تشویشناک حد تک اضافے سے نہ صرف معصوم لڑکیاں عدم تحفظ کا شکار ہو رہی ہیں بلکہ ان کے والدین اور رشتہ دار بھی سخت تشویش میں مبتلا ہیں۔ نوجوان لڑکیوں کو سہانے خواب دکھا کر اور اچھی نوکری کا جھانسہ دے کر ان کے ضمیر کا سودا کیا جاتا ہے۔ ایسے معصوم لڑکیاں وحشی درندوں کے ہاتھوں اپنی عزت گنوا بیٹھتی ہیں۔

ایسا ہی ایک افسوسناک واقعہ نارووال کی رہائشی لڑکی کے ساتھ پیش آیا جو نارووال سے لاہور نوکری کے لئے آئی۔ متاثرہ لڑکی کا کہنا ہے کہ رحمان اور طلحہ نوکری کا جھانسہ دیکر نولکھا میں واقع کوارٹر میں لے گئے، کوارٹر میں موجود نعیم نامی شخص کو انٹر ویو دینے کے لئے کہا گیا۔ 

ایف آئی آر کے مطابق ملزم نعیم لڑکی کو 2 روز تک زیادتی کا نشانہ بناتا رہا۔ متاثرہ لڑکی 2 روز بعد کوارٹر سے بھاگ کر تھانے پہنچ گئی۔ پولیس نے واقعہ کا مقدمہ درج کرتے ہوئے 2 ملزموں کو گرفتار کر لیا جبکہ مرکزی ملزم نعیم کی تلاش جاری ہے۔