وزیراعظم عمران خان کے سر پر بڑا خطرہ منڈلانے لگا

04:38 PM, 7 Sep, 2018

Sughra Afzal

(ملک اشرف) لاہور ہائیکورٹ نے عمران خان کے بطور وزیر اعظم انتخاب کو غیر آئینی قرار دینے کے کیس کی جلد سماعت کیلئے پیپلز پارٹی اور جماعت اسلامی سمیت دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد وحید نے شیخ زاہد محمود کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل اے کے ڈوگر نے متفرق درخواست میں وزیر اعظم کے انتخاب میں ووٹ نہ ڈالنے والے پیپلز پارٹی اور جماعت اسلامی کے 69 اہم ارکان قومی اسمبلی کو فریق بناتے ہوئے نشاندہی کی کہ وزیر اعظم کے انتخاب کے لیے ملک کی دو بڑی سیاسی جماعتوں پاکستان پیپلز پارٹی اور جماعت اسلامی نے ووٹ نہیں دیئے۔ قانون کےمطابق وزیر اعظم کے انتخاب کے لیے قومی اسمبلی کےہر رکن کا ووٹ ڈالنا ضروری ہے.

درخواستگزار وکیل نے یہ بھی نشاندہی کی کہ پیپلز پارٹی اور جماعت اسلامی ایوان میں موجود رہیں لیکن ووٹ کاسٹ نہیں کیا. ان دونوں جماعتوں نے وزیر اعظم کے الیکشن میں حصہ نہیں لیا جو کہ ان کے حلف کی بھی خلاف ورزی ہے۔

درخواست گزار نے دعوی کیا کہ جب وزیر اعظم کا الیکشن قانون کے مطابق نہیں ہوا تو حکومت تشکیل نہیں پا سکتی۔

یہ بھی لازمی پڑھیں:نیوز بلیٹن3بجے 15 نومبر 2018  

 درخواستگزار نے استدعا کی کہ کیس کی اہمیت کے پیش نظر اس کی جلد سماعت کی جائے اور عمران خان کو وزیر اعظم منتخب کرنے کا اقدام غیر آئینی قرار دیا جائے۔

 عدالت نے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے متفرق درخواست پر مزید کارروائی یکم نومبر تک ملتوی کردی۔

مزیدخبریں