نوجوان فیشن ماڈل گرل کا بے دردی سے قتل؛ ملزم کا سنسنی خیز بیان

نوجوان فیشن ماڈل گرل کا بے دردی سے قتل؛ ملزم کا سنسنی خیز بیان
کیپشن: fashion girl Sidra murder
سورس: google
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

(ویب ڈیسک)ضلع اوکاڑہ سے تعلق رکھنے والی ایک نوجوان فیشن ماڈل سدرہ خالد کو اُن کے چھوٹے بھائی حمزہ خالد نے مبینہ طور پر غیرت کے نام پر گولی مار کر قتل کر دیا ہے۔

رینالہ خورد سٹی کے ایس ایچ او انسپیکٹر جاوید خان کے مطابق ’ سدرہ خالد کو ماڈلنگ کا شوق تھا اور وہ فیصل آباد میں ماڈلنگ کیا کرتی تھیں۔ رمضان کے مہینے میں واپس اپنے گھر اوکاڑہ آئیں تھیں اور عید الفطر کے بعد واپس کام پر جانے لگیں تو گھر والوں نے اعتراض کیا۔‘

قتل کے محرکات پر بات کرتے ہوئے انسپکٹر جاوید نے بتایا کہ اُن پر گھر والوں کی طرف سے ماڈلنگ چھوڑنے کے لیے دباؤ تھا اور ' قتل کی وجہ مقتولہ کو ماڈلنگ سے باز رکھنا بنی۔‘انھوں نے بتایا کہ ’اِس قتل کی ایف آئی آر سدرہ خالد کی والدہ کی مدعیت میں درج کرائی گئی ہے۔‘

واضح رہے کہ 22 سالہ سدرہ خالد نے بی اے تک تعلیم حاصل کر رکھی تھی، ان کی تین بہنیں اور ایک بھائی ہے۔ پولیس کے مطابق اِن چار بہنوں کے واحد بھائی حمزہ خالد کی عمر 20 برس ہے۔

انسپیکٹر جاوید خان کے مطابق ’سدرہ کے گھر والوں نے اُن کے ماڈلنگ کرنے پر اعتراض کے ساتھ اُنھیں گھر میں ہی رہنے کی تلقین کی لیکن وہ بضد ہو گئیں اور دونوں بہن بھائیوں (سدرہ اور حمزہ) میں تلخ کلامی ہوئی۔'

پولیس کے مطابق 'اِس وقت ان کے والد بھی گھر میں ہی موجود تھے، انھوں نے بھی سدرہ کو روکنے کی کوشش کی، جب وہ باز نہ آئی تو اُن کے بھائی نے اپنے باپ کے پستول سے اُس پر فائر کردیا جو اُسے بائیں آنکھ کے اوپر لگا اور وہ موقع پر ہی ہلاک ہو گئی۔‘

پولیس نے اطلاع ملنے پر فوری کارروائی کرتے ہوئے نعش کو اپنے قبضہ میں لے لیا اور مقدمہ درج کرکے ملزم کو آلہ قتل ساتھ گرفتار کر لیا، جو اِس وقت حوالات میں ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وہ اس قتل کے پیچھے دیگر افراد کے ملوث ہونے کے بارے میں مزید تفتیش کر رہی ہے۔