ڈیفنس میں جواں سالہ لڑکی کے قتل کیس میں اہم پیشرفت

girl murder
girl murder

(حسن خالد)ڈیفنس میں جواں سالہ لڑکی کے قتل میں اہم پیشرفت،پولیس نے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا۔

 تفصیلات کے مطابق ڈیفنس میں جواں سالہ لڑکی کے قتل میں اہم پیشرفت  سامنے آئی ہے، پولیس نے دو ملزمان ظاہر جدون اور سعد امیر بٹ کو گرفتار کرلیا۔ لڑکی مائرہ کے قتل کا  مقدمہ تھانہ ڈیفنس بی میں مقتولہ کے کے پھوپھا محمد نذیر کی مدعیت میں  درج کیا گیا تھا۔

 واضح رہے کہ ظاہر جدون اور سعد امیر بٹ مائرہ کے ساتھ شادی کے خواہش مند تھے  تاہم مقتولہ نے دونوں کے ساتھ شادی سے انکار کردیا تھا۔پولیس نے مقتولہ مائرہ کے دوست ظاہر جدون اور سعد امیر بٹ سمیت چار ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔شادی سے انکار پر مائرہ کو دونوں دوستوں سے جان کا خطرہ تھا ۔ مائرہ کے والدین بیرون ملک مقیم ہیں،مائرہ فیز فائیو میں کرایہ کے گھر میں اپنی دوست  دوست اقرا کے ہمراہ رہائش پذیر تھی۔ 

مقتولہ چند روز قبل اپنی دوست سجل کے ہمراہ یوکے سے پاکستان آئی تھی۔مقتولہ کو سحری کے وقت اسکے دوست گھر چھوڑ کر گئے اور دوپہر میں لاش برآمد ہوئی۔پولیس نے موقع سے شواہد اکٹھے کر کے مقتولہ کی لاش پوسٹ مارٹم کے لئے منتقل کر دی تھی ۔ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے تھے،چھاپوں کے دوران پولیس نے دو ملزمان ظاہر جدون اور سعد امیر بٹ کو گرفتار کے مزید تفتیش شروع کر دی ہے۔