پٹرول کی قلت شدت اختیار کر گئی، متعدد پمپس بند

پٹرول کی قلت شدت اختیار کر گئی، متعدد پمپس بند

فیروزپورروڈ (شہزاد خان)شہر میں پٹرولیم مصنوعات کی سنگین قلت، بحران شدید تر ہوگیا، مغلپورہ، لال پل، جوہر ٹاؤن، فیصل ٹاؤن، ملتان روڈ،شمالی لاہور سمیت متعدد علاقوں میں پٹرولیم مصنوعات نایاب ہونے سے پٹرول پمپس بند ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق شہر کے کئی علاقوں میں پٹرول پمپس کے پاس ذخیرہ ختم ہونے سے پمپس بند ہوگئے ۔ مغلپورہ، تاجپورہ سکیم، جوہر ٹاون، بند روڈ،گلشن راوی، ٹھوکر،شمالی لاہور،فیصل ٹاؤن، شاہدرہ سمیت متعدد علاقوں میں پٹرول پمپس بند ہوگئے۔انتظامیہ کی غفلت اور پٹرول کی سپلائی میں تعطل پیدا ہونے کے باعث شہر کے متعدد پٹرول پمپس پر پیٹرول دستیاب نہیں جن پمپس پر پٹرول دستیاب ہے وہاں لمبی لائنیں لگ گئی ہی۔

مصدقہ ذرائع کے مطابق پرائیویٹ آئل مارکیٹنگ کمپنیز نے پٹرولیم مصنوعات سستی ہونے کے چکر میں بروقت خریداری ہی نہ کی اور یکم جون سے قیمتیں کم ہونے کے بعد پٹرولیم مصنوعات کی خریداری کے آرڈرز دیئے جس کے باعث طلب ورسد کا توازن بگڑا اور بحران پیدا ہوگیا۔

جنرل سیکرٹری پٹرولیم ڈیلرز خواجہ عاطف نے کہا کہ وزارت پٹرولیم نے بھی غفلت کا مظاہرہ کیا اور 20دن کا سٹاک رکھنے  کی پابند کمپنیز کا ذخیرہ چیک کیوں نہ کیا، تاہم مارکیٹنگ کمپنیز کے ذرائع کا کہنا ہے کہ آئندہ دو سے تین روز میں لاہور میں پٹرولیم مصنوعات کی سپلائی طلب کے مطابق پہنچ جائیگی اوربحران ختم ہوجائے گا۔

دوسری جانب  اوگرا نے ملک میں پٹرولیم بحران کا خدشہ ظاہر کر دیا ہے،  اوگرا نے آئل ریفائنری اور آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کے ذخائر کی تفصیلات وزارت توانائی کو ارسال کر دیں، ذرائع نے بتایاکہ آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کے پاس لائسنس کے مطابق پٹرولیم قیمتوں پر نظر رکھیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں حکومت کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی گئی تھی جس کے بعد 90 روز میں پیٹرول کی قیمت میں 43 اور ڈیزل کی قیمت میں 47 روپے کمی ہوئی ہے لیکن اس کے باوجود اشیائے ضرویہ کی قیمتیں آسمان پر موجود ہیں۔