ڈالر کی قدر میں کمی

 ڈالر کی قدر میں کمی

( حسن علی ) کاروباری ہفتے کے پہلے روز روپے کے مقابلے ڈالر کی قدر میں 26 پیسے کی کمی ریکارڈ کی گئی اور ڈالر 159 روپے 91 پیسے پر بند ہوا۔

کاروباری ہفتے کے پہلے روز کے آغاز سے ہی انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت میں کمی دیکھی گئی جو سارا دن جاری رہی اور کاروبار کے دوران انٹر بینک میں ڈالر 2 روپے 67 پیسے تک سستا ہو گیا، تاہم کاروبار دن کے اختتام سے قبل ڈالر کی قیمت میں پھر سے اضافہ ہونا شروع ہوا اور دن کے اختتام پر انٹر بینک میں ڈالر 26 پیسے کمی کے بعد 159 روپے 91 پیسے پر بند ہوا۔

فاریکس ڈیلرز کا کہنا ہے کہ شرح سود میں کمی اور بیرونی امداد کے باعث انٹر بینک میں ڈالر کی قدر میں کمی آ رہی ہے۔

یاد رہے اپریل کے اختتام میں انٹر بینک میں ڈالر 6.53 روپے سستا ہونے سے دیگر کرنسی بھی سستی ہوگئیں تھیں۔ ایک ماہ میں انٹر بینک میں ڈالر 166.70 سے سستا ہوکر 160.17 روپے کا ہوگیا۔ ڈالر سستا ہونے سے یورو، برطانوی پاؤنڈ، سعودی ریال اور امارتی درہم بھی سستا ہوگیا۔ اپریل میں یورو 8.96 روپے سستا ہوا جبکہ ایک ماہ میں یورو 183.14 سے کم ہوکر 174.18 روپے کا ہوگیا تھا۔

گزشتہ ماہ میں برطانوی پاونڈ 5.68 روپے سستا ہوا، اپریل میں برطانوی پاونڈ 205.41 سے کم ہوکر 199.73 روپے، سعودی ریال 1.77 روپے سستا ہوکر 42.60 روپے کا ہوا جبکہ ایک ماہ میں امارتی درہم 1.78 روپے سستا ہوکر 43.60 روپے کا ہوگیا تھا۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس کے باعث عالمی سطح پر تجارت متاثر ہوکر رہ گئی ہے۔ عالمی بینک کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے سبب تیز گراوٹ کے نتیجے میں ترسیلات زر میں کمی کا امکان ہے، عالمی بینک کے مطابق اجرت، ملازمت میں کمی کے باعث تیز گراوٹ ہوگی۔

میزبان ممالک میں معاشی بحران سے ملازمتوں میں کمی کا خطرہ ہے۔ کم درمیانی آمدنی والے ممالک کو ترسیلات زر میں 19.7 فیصد کمی ہوسکتی ہے اور متعدد کمزور گھرانوں کے لیے اہم معاشی لائف لائن نقصان کو ظاہر کرتی ہے۔